جلد پر ہونے والے پھوڑے پھنسی کے لیے بیوسڈ کریم کا استعمال

0

جسم یا جلد پر کسی انفیکشن کی وجہ سے دانے نکل آتے ہیں جو بڑھتے بڑھتے پھوڑے اور پھنسی کی شکل اختیا رکرلیتے ہیں، ان سے نجات حاصل کرنا بہت ضروری ہوتا ہے۔ پھوڑے اور پھنسیاں متاثرہ شخص کے لیے تو تکلیف کا سبب ہوتے ہی ہیں دیکھنے والوں کو بھی ان سے کراہت محسوس ہوتی ہے جو ایک اچھا عمل نہیں ہے۔

پھوڑے اور پھنسیوں کی وجوہات : (what cause boils)

٭ پھوڑے اور پھنسیاں برسات کے موسم میں زیادہ ہوتی ہیں۔
٭ جلد پر پہلے کسی جگہ درد محسوس ہوتا ہے، آہستہ آہستہ وہ جگہ سوج کر سرخ ہونے لگتی ہے، پھر وہاں سے ایک سر یا منہ ظاہر ہونے لگتا ہے جس میں درد ہوتا ہےجو پھوڑا کہلاتی ہے۔
٭ جلد پر ظاہر ہونے والے دانے جن میں زیادہ خارش ہونے لگتی ہے تو کھجانے کے عمل سے یہ زخمی بھی ہوجاتے ہیں، ناخن کے جراثیم ا ن کو پھوڑے کی شکل دے دیتے ہیں۔

پھوڑے پھنسی کا علاج بیوسڈ کریم :(treat boils with busid cream)

٭ پھوڑے اور پھنسی کی بیماریوں شروع سے ہی چلی آرہی ہے۔
٭ ہر دور میں ماہرین نے اس سے نجات کے لیے جیل، کریم اور ادویات متعارف کرائی جاتی رہی ہیں۔
٭ پھوڑے پھنسیوں سے نجات کے لیے دنیا بھر میں مہنگی سے مہنگی ادویات بھی مارکیٹس میں دسیتاب ہیں۔
٭ بائیو لیب کی تیار کردہ بیوسڈ کریم ، پھوڑے اور پھنسیوں سے نجات کے لیے بہترین کریم مانی جاتی ہے۔
٭ اس میں شامل اجزا خاص طور پر پھوڑے اور پھنسی کی وجہ بننے والے عوامل پر اثر انداز ہوتے ہیں اور انھیں ختم کرتے ہیں۔
٭ بیوسڈ کریم آہستہ آہستہ جلد کے اندر جذب ہوتی ہے اور اپنا اثر دکھاتی ہے۔
٭ بیوسڈ کریم کی خاص بات یہ بھی ہے کہ اس کے استعمال سے جلد پر منفی اثرات مرتب نہیں ہوتے۔
٭ بیوسڈ کریم چار سے چھ ہفتوں میں پھوڑے اور پھنسیوں سے نجات دلاتی ۔
٭ اگر اس دوران پھوڑے اور پھنسیوں کے خاتمے میں کوئی فرق محسوس نہ ہو تو اس کے لیے ضروری ہے کہ اپنے ماہر ڈاکٹر سے رجوع کیا جائے اور ان کے مشورے کے مطابق بیوسڈ کریم استعمال کی جائے۔

پھوڑے اور پھنسی کے دوران احتیاط: (be careful during boils)

٭ اگر مریض کو بہت زیادہ پھوڑے اور پھنسیاں نکلی ہوئی ہیں تو بہتر ہے کہ اس کا کمرہ یا جگہ گھر کے دوسرے افراد سے کچھ وقت کے لیے الگ کردی جائے۔
٭ مریض کا تولیہ، صابن اور بستر کوئی اور استعمال نہ کرے۔
٭ متاثرہ شخص کے لیے ضروری ہے کہ وہ کھانے پینے میں احتیاط برتے۔
٭ بھوک لگنے کی صورت میں ایسی غذا سے پرہیز کرے جو بہت زیادہ چکنی ہوں یا بہت زیادہ مسالے دار ہوں۔
٭ دن میں اگر 8 گلاس پانی پیے جارہے ہیں تو کوشش کریں کہ ان کی تعداد بڑھا دی جائے۔
٭ پھوڑے اور پھنسی سے نجات حاصل کرنے کے لیے گھریلو ٹوٹکوں سے پرہیز کریں۔
٭ گرم جگہ پر رہنے سے گریز کریں۔ خاص طور پر ایسی خواتین جو پھوڑے اور پھنسی کا شکار ہیں انھیں چولہے کے قریب جانے سے بھی گریز کرنا چاہیے۔