میلازما کی وجہ ذہنی دبائو

0

ذہنی دبائو وہ بیماری ہے جو حسن کو کھا جاتی ہے، سکون تباہ کردیتی ہے، نیندیں اڑا ددیتی ہے، اور کسی صورت قرار نہیں لینے دیتی۔ مستقل ذہنی دبائو صحت کے ساتھ ساتھ جلد کو بھی خراب کر کے رکھ دیتا ہے۔ ذہنی دبائو سے جہاں بڑی بڑی اور کبھی کبھی خطرناک بیماریاں جنم لیتی ہیں وہیں جلد کی معمولی بیماریاں بھی جنم لیتی ہیں جو کچھ وقت گزرنے کے بعد معمولی نہیں بلکہ غیر معمولی بیماری بن کر ابھرتی ہیں۔

کسی بھی پریشانی ، ذہنی دبائو اور تنائو کی وجہ سے انسانی جسم کا نظام درہم برہم ہو کر رہ جاتا ہے، سوچیں اور فکریں ذہن کو چاروں طرف سے گھیر لیتی ہیں، مزاج میں وہ چڑچڑاہٹ پیدا ہوتی ہے کہ کسی کی اچھی بات بھی بری لگتی ہے۔ اسی ذہنی دبائو کی وجہ سے جلد کی ایک بیماری میلازما جسے جھائیاں (freckles) بھی کہا جاتا ہے، چہرے کو گہنا کے رکھ دیتی ہے،جلد پر نمودار ہونے والی بیماری میلازما چہرے پر سیاہ اور بھورے دھبے ظاہر کرتی ہے اور پھر خوبصورت سے خوبصورت چہرہ بھی ماند پڑ جاتا ہے۔

میلازما ظاہر ہونے اور اس کی تصدیق ہوجانے کی صورت میں لازما کریم (lazma cream) اس کا بہترین علاج ہے۔ لازما کریم خاص طور پر میلازما کے لیے تیار کی گئی ہےجس سے چہرے کے سیاہ اور بھورے داغ کا خاتمہ بہت جلد ممکن ہوتا ہے۔

ذہنی دبائو کے نقصانات : (disadvantages of stress)

٭ ذہنی دبائو اور مستقل ذہنی تنائو کی وجہ سے کچھ طبیعت کو کچھ اچھا نہیں لگتا۔
٭ مستقل ذہنی دبائو بلڈ پریشر ، ہارٹ اٹیک اور فالج کا سبب بھی بن سکتا ہے۔
٭ ذہنی دبائو کی صورت میں خود سے علاج کی بجائے ڈاکٹر کے مشورں پر عمل کریں ۔
٭ مستقل ذہنی دبائو کی وجہ سے سرکا درد بھی بڑھ جاتا ہے جس سے مزاج میں تبدیلی واقع ہوتی ہے۔
٭ میلازما ہی نہیں جدید تحقیق سے یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ ذہنی دبائو سے جلد پر ایکنی بھی نمودار ہوسکتی ہے۔

ذہنی دبائوسے نجات : (get rid of stress)

کچھ لوگ بہت حساس ہوتے ہیں، چھوٹی چھوٹی باتوں کو ذہن پر سوار کرلیتے ہیں جس سے ان کے اندرونی نظام میں ٹوٹ پھوٹ شرو ع ہوجاتی ہے، غصے اور فکر کی ملی جلی کیفیت میں دوران خون کی رفتار بھی بڑھنے لگتی ہے ، اس سے بچائو اور نجات کے لیے سب سے پہلے تو ذہن کو آزاد چھوڑ دیں اور کوشش کریں کہ دوسرے کاموں میں ذہن کو بانٹ لیں۔

ذہنی دبائو میں میلازما سے بچائو : (avoid melasma in stress)

٭ خود کو ذہنی دبائو سے بچائیں تاکہ میلازما جیسی بیماری آپ پر حملہ آور نہ ہوسکے۔
٭ کوشش کریں ایسے کاموں میں خود کو مصروف کرلیں جس میں آپ کی دلچسپی شامل ہو۔
٭ دوسروں کے کام آنے کی کوشش کریں اس سے ذہن کوروحانی طور پر سکون حاصل ہوتا ہے۔
٭ اگر آپ کو مطالعے کا شوق ہے تو اپنی پسند کی کتابیں پڑھیں تاکہ آپ کا ذہن بٹ سکے۔
٭ دوستوں کی محفل میں جائیں، باتیں کریں اور ذہن کو پریشانی سے دور رکھیں۔
٭ کوشش کریں بھرپور نیند لیں، ا س سے ذہنی سکون حاصل ہوتا ہے اور جلد بھی شاداب رہتی ہے۔
٭ ذہنی دبائو سے بچائو کے لیے سیر و تفریح کو ترجیح دیں تاکہ صحت بحال رہے۔
٭ اگر آ پ خود کو ذہنی دبائو سے بچالیں گے تو میلازما تو کیا جسم اور جلد کی کوئی دوسری بیماری بھی آپ کے پاس نہیں آسکتی۔