بوسڈ کریم آبلوں کے درد میں آرام پہنچائے

0

جلد کی کچھ بیماریاں بہت خطرناک صورت بھی اختیار کر جاتی ہیں، جن سے نجات بہت مشکل ہوتی ہے، یہ بیماریاں تکلیف دینے کے ساتھ ساتھ چلنے پھرنے سے بھی معذوری کا سبب بن سکتی ہیں۔ جن میں ایک بیماری پیروں میں آبلوں کا ہوجانا بھی ہے۔

آبلہ کیا ہے؟:(what is blister)

جلد پر خاص طور پر پیروں کی جلد میں مسلسل کسی رگڑ کی وجہ سے چھالہ بن جاتا ہے جس میں مواد یا سیال بھر جاتا ہے اس کے اوپر ایک ہلکی سے تہہ آجاتی ہےجس کو آبلہ کہتے ہیں۔آبلے میں پایا جانے والاسیال اور مواد اس لیے بھی خطرناک ہوتا ہے کہ یہ ایک سے دوسرے کو لگتا ہے اور آبلے یا دانے کی صورت اختیار کر جاتا ہے۔

آبلے کی وجوہات:(blister causes)

وہ لوگ جنھیں ننگے پیرگھومنے کی عادت ہوتی ہے ان کو پتھروں کی رگڑ لگنے سے آبلہ پیدا ہوتا ہے۔
اس کے علاوہ وہ لوگ جو تنگ جوتے پہنتے ہیں اس سے ان کے پیروں میں تکلیف بھی ہوتی ہے اور پیروں میں ہوا بھی نہیں لگتی جس کی وجہ سے آبلے پیروں میں بن جاتے ہیں۔
وہ لوگ جو اپنے پیروں کو دھونے کے چور ہوتے ہیں اور گندے پیروں پر جوتے پہن کر چل پڑتے ہیں ان کو بھی آبلے جیسی جلد کی بیماری کا سامنا ہوتا ہے۔
کچھ لوگوں کے موزے پسینے سے بھرے ہوتے ہیں اور ان کو صاف کرنا اور دھونا ان کو دنیا کا مشکل کام لگتا ہے ، بار بار وہی میلے موزے پہننے سے نہ صرف پیروں سے بو آتی ہے بلکہ آبلے جیسی بیماری بھی ان کے پیروں میں جنم لیتی ہے۔
کچھ جوتوں کا چمڑا اتنا سخت ہوتا ہے کہ پیروں کی نازک کھال اس کو برداشت نہیں کر پاتی، جوتے کاٹنے لگتے ہیں اور پیروں میں عجیب قسم کی نمی آجاتی ہے جو پیروں میں آبلوں کا باعث ہوتی ہے۔

آبلوں کا علاج:(blister treatment)

آبلوں کا علاج ویسے تو گھریلو نسخوں سے بھی ہوجاتا ہے لیکن طبی تحقیق یہ کہتی ہے کہ اس معاملے میں کوئی بھی بے احتیاطی اور لاپروائی نہ برتی جائے، ایسی صورت میں سب سے پہلے کسی ماہر ڈاکٹر کو دکھایا جائے اور اس کے مشورے کے بعد آبلوں کا علاج کیا جائے۔

بوسڈ کریم سے آبلوں کا علاج:(treat blister pain with Busid cream)

بازار میں جلد کی بیماریوں کے لیے بے شمار کریمز، لوشن اور جیل دسیتاب ہیں جو بہت حد تک جلد کی عام بیماریوں کا خاتمہ بھی کرتے ہیں ، ان ہی میں بوسڈ کریم بھی خاص ہے۔
بائیو لیب کی تیار کردہ بوسڈ کریم کی خاصیت یہ ہے کہ اس کو بیرونی طور پر استعمال کیا جاتا ہے جس سے اس کے جسم کے اندرونی نقصانات کا کوئی خطرہ نہیں ہوتا۔
ایسے پائوں جن پر ایک یا ایک سے زائد چھالے یا آبلے ہیں ان پر رات کے وقت بوسڈ کریم لگانے سے ان سے چند دنوں یا چند ہفتوں میں ہی نجات ممکن ہوجاتی ہے۔
آبلے اکثر پھٹ بھی جاتے ہیں جس سے متاثرہ شخص کو تکلیف کا سامنا بھی کرنا پڑتا ہے، بوسڈ کریم میں شامل اجزا پھٹے ہوئے آبلوں کو بھی جلد از جلد ٹھیک کرنے کی خاصیت رکھتے ہیں۔
آبلے اور چھالے ہوجانے کی صورت میں بوسڈ کریم استعمال کرتے ہوئے اس بات کا خیال رکھنا ضروری ہے کہ پائوں یا متاثرہ جگہ پر کریم لگانے کے بعد اس کو کسی کپڑے سے ڈھانپنے نہیں، اس جگہ کو کھلی چھوڑ دیں تاکہ کریم اچھی طرح جذب ہو کر آبلوں اور چھالوں سے نجات دلادے۔