السی کے تیل اورکیپسول کے صحت بخش فوائد

0

السی کے بیجوں کی طرح اس کاتیل بھی اومیگا3- فیٹی ایسڈ (omega 3 fatty acids) اوردیگرصحت بخش مرکبات کامجموعہ ہے۔ جودل کی صحت کے ساتھ ساتھ مجموعی صحت پرمثبت اثرات مرتب کرتاہے۔ صرف ایک کھانے کے چمچ (15ملی لیٹر) السی کے بیج میں 7,196 ملی گرام اومیگا3- فیٹی ایسڈ موجودہوتاہے۔ صرف ایک چمچ السی کاتیل (flaxseed oil) آپ کی روزمرہ کی لینولینک ایسڈ(ala)کی ضروریات کوپوراکرسکتاہے۔
آپ اسے دیگرتیل کے متبادل کے طورپر استعمال کرسکتے ہیں۔اسے جلد اوربالوں (skin and hairs) پراستعمال کیاجاسکتاہے۔ اگرآپ اپنی غذامیں مچھلی یامچھلی کاتیل استعمال نہیں کرتے تواس کی جگہ آپ السی کاتیل یااس کاسپلیمنٹ بھی استعمال کرسکتے ہیں۔یہ سپلیمنٹ کے طورپرکیپسول اورٹوپیکل جیل کی صورت میں بھی دستیاب ہوتاہے۔

السی کے تیل میں موجودمرکبات : (flaxseed oil compound)

یہ تیل السی کے بیجوں سے نکالاجاتاہے اس تیل میں بہت سے مفید مرکبات شامل ہوتے ہیں جیسے:

٭اومیگا3- فیٹی ایسڈ
٭صحت مندپروٹین
٭فائبر
٭فینولک ایسڈ
٭کیلشیم اورمیگنیشیم سمیت دیگرمعدنیات وغیرہ

صحت کے حوالے سے اس کے بہت سے متاثرکن فوائد ہیں :
 (beneficial for your health)

1۔ سوزش دورکرتاہے

یہ تیل کیونکہ اومیگا3- فیٹی ایسڈ (omega 3 fatty acid) پرمشتمل ہوتاہے اسی لئے اس میں سوزش کوکم کرنے کی صلاحیت موجودہوتی ہے۔ایک مطالعہ کے مطابق اس میں ایک ایسامرکب پایاجاتاہے جو Cری ایکٹوپروٹین کوکم کرتاہے۔

2۔ کینسرکے خطرے کوکم کرتاہے

اینٹی آکسیڈنٹس کی خاصیت کے ساتھ اس میں کینسرسے لڑنے کی صلاحیت موجود ہوتی ہے۔یہ لگننس کابہترین ذریعہ ہے جوچھاتی کے کینسرکے خطرے کوکم کرتاہے۔ اس میں موجود لینولینک ایسڈ (ala)کینسرکے خلیات کی افزائش کوسست یہاں تک کہ ختم کرنے کی صلاحیت بھی رکھتے ہیں۔

3۔ دل کی صحت کوفروغ دیتاہے

مطالعات سے پتہ چلتاہے کہ اس تیل سے تیارکردہ سپلیمنٹ کودل کے امراض کی روک تھام اور دل کی صحت کوفروغ دینے کے لئے استعمال کیاجاتاہے۔اس کی مددسے اومیگا3- فیٹی ایسڈ،(epa)اور(dha) کی سطح میں اضافہ ہوسکتاہے۔ ala جسم میں جاکر (epa)اور (dha) میں تبدیل ہوجاتاہے۔

4۔آنتوں کی صحت کوبہتربناتاہے

السی کے تیل میں قبض کشاخصوصیات پائی جاتی ہیں۔ ہیموڈائیلیسزکے 50 مریضوں پرکئے گئے مطالعہ کے مطابق السی کے تیل کے سپلیمنٹ کے روزمرہ استعمال سے قبض دورہوسکتاہے۔ آئی بی ایس کے 40 مریضوں پرکئے گئے مطالعہ کے مطابق السی کاتیل آئی بی ایس سے منسلک زیریں سوزش، قبض اورڈائیریا سمیت تمام علامات کوکم کرنے میں مددکرتاہے۔

5۔جلد کے مسائل دورکرتاہے

اگرجسم میں ala کی سطح کم ہوتوجلد کے مسائل (skin problems) بڑھ جاتے ہیں۔السی کاتیل ala سے لبریزہوتاہے اسی لئے یہ جلد کی صحت کے لئے مفیدتصورکیاجاتاہے۔ تحقیقات سے پتہ چلتاہے کہ السی کاتیل جلد کے خلیات کی سوزش کوکم کرکے جلد کی صحت کوفروغ دینے میں مددفراہم کرسکتاہے۔

6۔وزن میں کمی لاتاہے

السی کاتیل نظام ہضم کے ذریعے زہریلے مادوں کوجسم سے خارج کرنے کی صلاحیت رکھتاہے۔جس سے وزن کم کرنے میں مددملتی ہے۔ ایک جریدے کی 2012 کی رپورٹ کے مطابق السی کاتیل بھوک کوکم کرتاہے۔ جس کی وجہ سے کھاناکم کھایاجاتاہے۔

7۔ذیابیطس کے خطرے کوکم کرتاہے

ذیابیطس کے خطرے کوکم کرنے اوراسے منظم کرنے میں اہم کرداراداکرتاہے۔ یہ انسولین کی حساسیت کوبہتربنانے میں مددکرتاہے۔ مطالعہ کے مطابق یہ گلوکوزکی سطح کوکنٹرول کرتاہے۔ یہ ذیابیطس کی وجہ سے ہونے والی دماغی خرابیوں کوبھی دورکردیتاہے۔

8۔ ہڈیوں کی صحت کوفروغ دیتاہے

یہ ہڈیوں کی صحت بہتربناکرانھیں ٹوٹنے سے بچاتاہے۔غذامیں alaکی مقدارمیں اضافہ سے ہڈیوں کی طاقت کوبرقراررکھاجاسکتا ہے۔ یہ اسٹروجن کی کمی اوراوسٹیوپروسس کے خطرات سے بچاتاہے۔

9۔ مینوپاس کی علامات کوکم کرتاہے

السی کے تیل کے ذریعے مینوپاس کی علامات کوکم کرنے کے بہت سے شواہدموجودہیں۔ مینوپاس کاشکار 140 خواتین کامطالعہ کیاگیاجس میں السی کے تیل والے سپلیمنٹ کے استعمال سے ان میں ہاٹ فلیش میں کمی آئی اوران کی طرززندگی کے معیارمیں اضافہ ہوا۔

10۔ دماغ کی حفاظت کرتاہے

مطالعہ کے مطابق السی کے تیل سے (bdnf) کی سطح میں اضافہ ہوتاہے۔ جس سے اعصابی خلیوں کی حفاظت میں مددملتی ہے۔ اس کے علاوہ یہ فالج کے خطرات سے بھی بچاتاہے۔بائی پولرکے مریضوں میں اس کے استعمال سے موڈ کوبہتربنانے میں مددملتی ہے۔

استعمال کرنے کاطریقہ

السی کے تیل کومختلف طریقوں سے استعمال کیاجاسکتاہے۔اسے دیگراہم تیلوں کی طرح کھانوں،شیک یااسمودھی اور سلادمیں ڈریسنگ کے طورپربھی استعمال کیاجاسکتاہے۔
٭السی کے تیل کوکھاناپکانے میں استعمال نہیں کیاجاتاکیونکہ جب یہ گرم ہوتاہے تواس میں نقصان دہ کیمیکل تشکیل پاتے ہیں اسی لئے اسے ٹھنڈی جگہ رکھاجاتاہے۔
٭کھانے کے علاوہ آپ اسے جلد پربھی لگاسکتے ہیں۔ جلد کی صحت (skin health) کوبہتربنانے کے لئے آپ اسے کریم میں شامل کرسکتے ہیں۔
٭اس کے علاوہ بالوں کی صحت ،چمک اورافزائش کے لئے اسے سرمیں بھی لگایاجاسکتاہے۔
٭السی کاتیل ڈائیٹری سپلیمنٹ کی صورت میں کیپسول کی صورت دستیاب ہوتاہے لیکن خوراک ڈاکٹرکی ہدایت کے مطابق لیں۔
٭دیگرادویات کے ساتھ اس کااستعمال اورمقدارجاننے کے لئے ڈاکٹرسے رابطہ کریں۔

السی کاتیل کن افرادکے لئے نہیں ہے

صحت کے حوالے سے السی کے بیج نہایت فائدہ مند ہیں لیکن فوائد کے ساتھ ساتھ اس کے کچھ منفی اثرات بھی ہیں ۔ جن کااسے اپنی غذامیں شامل کرنے سے پہلے خیال رکھناضروری ہے۔ مندرجہ ذیل افراد کوالسی کاتیل استعمال نہیں کرناچاہئے:
٭حاملہ خواتین
٭چھوٹے بچے
٭نرسنگ مدر
٭خون کے امراض میں مبتلاافراد
٭آپریشن سے پہلے اوربعدمیں
٭خون پتلاکرنے والی ادویات کااستعمال کرنے والے افراد
٭الرجی کے مریض

احتیاطی تدابیر

٭اکثرافراد کے لئے یہ یکساں مفیدہے لیکن اس کی اضافی مقدارڈائیریایاپھرلوزموشن کاسبب بن سکتی ہے یاپھرالرجک ردعمل بھی ممکن ہے۔
٭بہت سی تحقیقات کے مطابق (ala) کی اضافی مقدارسے پروسٹیٹ کینسریا ٹیومرکی افزائش کے خطرات بڑھ جاتے ہیں جبکہ کچھ تحقیقات کے مطابق یہ پروسٹیٹ کی صحت کے لئے اچھے ہیں اوراس میں ایسے مادہ شامل نہیں ہوتے جوٹیومرکی افزائش کوفروغ دیں۔
٭السی کے تیل کے زیادہ ترتجربات جانوروں پرکئے گئے ہیں انسانوں پراس کی تحقیق محدودہیں۔ اسی لئے اس کے استعمال سے پہلے ڈاکٹرکی رائے ضرورلیں۔
٭السی کے تیل سے اگربدبوآنے لگے تواس کامطلب یہ ہے کہ یہ ایکسپائرہوچکاہے اسی لئے اسے ہرگزاستعمال نہ کریں۔