ذہنی صحت جسمانی صحت کی طرح اہم ہے

0

جس طرح محنت کر کے انسان کا جسم تھک جاتا ہے اسی طرح بہت زیادہ سوچیں، فکریں اور پریشانیاں انسان کے ذہن کو تھکا دیتی ہیں۔ جس طرح جسم کو آرام کی ضرورت ہوتی ہے بالکل اسی طرح ذہن کو بھی سکون کی ضرورت ہوتی ہے۔

ماہرین کی تحقیق کے مطابق ایسے افراد جو جسمانی مشقت کے مقابلے میں ذہنی مشقت زیادہ کرتے ہیں وہ وقت سے پہلے بوڑھے ہوجاتے ہیں جس کی وجہ یہ ہے کہ وہ ذہن پر ضرورت سے زیادہ بوجھ ڈالتے ہیں اور اپنے اعصاب کو خود کمزور بنا لیتے ہیں۔

جسمانی اور ذہنی تھکن (mental health) کا ایک بنیادی فرق تو یہ ہے کہ جسمانی تھکن کو ایک تو وہ شخص محسوس کرتا ہے جو خود تھکاوٹ کا شکار ہوتا ہے اور اس کو دیکھ کر دوسرے افراد بھی اس کی تھکن کو محسوس کر لیتے ہیں جب کہ ذہنی تھکن وہی محسوس کرسکتاہے جس پر پریشانیاں اور مسائل گزر رہے ہوں۔

اچھی غذا، اچھا ماحول اور اچھی سوچ اچھی صحت کو جنم دیتی ہے، صحت جتنی اچھی ہوگی ذہن اتنا مضبوط اور توانا ہوگا، صحت جتنی کمزور ہوگی ذہن بھی اتنا ہی کمزور ہوگا اور ذہن کے کمزور ہونے کا ایک بڑا نقصان یہ ہے کہ انسانی چھوٹی چھوٹی باتوں کو بھی اپنے لیے پہاڑ محسوس کرتا ہے جس سے اس کو مزید نقصانات کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔

ذہنی صحت کے لیے : (for mental health)

٭ ذہنی صحت کو مضبوط بنانے کے لیے سب سے پہلے طاقتور اور وٹامنز سے بھرپور غذائیں استعمال کریں تاکہ ذہن طاقتور ہو اور سوچنے اور سمجھنے کی صلاحیت اس میں زیادہ ہو۔

٭ ذہنی صحت اچھی ہوگی تو گھر اور آفس کے کام بھی اچھے ہوں گے اور صلاحیتیں مزید ابھر کر سامنے آئیں گی۔

٭ ذہنی صحت کے اچھے ہونے سے انسانی صحت پر بھی اچھے اثرات مرتب ہوتے ہیں ۔

٭ ذہنی صحت کی کمزوری دور کرنے کے لیے ایسے پھل اور خشک میوہ جات کا استعمال کیے جائیں جن پر ڈاکٹرز کا اتفاق ہو۔

٭ ذہنی صحت کو طاقتور بنانے کے لیے اچھے اور خوشگوار ماحول میں زیادہ سے زیادہ وقت گزاریں۔

٭ اگر آپ تنہائی پسند ہیں تو کوشش کریں اپنی عادت کو بدل لیں کیوں کہ تنہائی ذہنی صحت کی دشمن ہے۔

٭ ایسی سرگرمیوں میں حصہ لیں جس سے آپ کی ذہنی صحت اور زیادہ اچھی ہو ۔

٭ اپنی دلچسپی سے متعلق محفلوں میں شرکت کریں تاکہ آپ ذہنی طور پر تازگی محسوس کریں۔

٭ انسان کو دنیا میں بہت سے فیصلے دوسروں کے لیے بھی کرنا ہوتے ہیں اور اچھی ذہنی صحت آپ سےفیصلے بھی ہمیشہ اچھے کرواتی ہے۔

٭ ذہنی صحت کمزور ہو تو طبیعت میں چڑ چڑا پن پیدا ہوجاتا ہے جو دوسروں کی طبیعت پر ناگوار گزرتا ہے۔

٭ کھانے میں ایسی سبزیوں کا ضرور استعمال کریں جو آپ کی صحت کے ساتھ ساتھ ذہنی صحت کے لیے بھی مفید ہوں۔

٭ ورزش کو اپنا معمول بنالیں تاکہ جسمانی صحت کے ساتھ ساتھ ذہنی صحت بھی تازہ رہے۔

٭ ذہن کی ورزش کے لیے سانس کی مشقیں مفید ثابت ہوتی ہیں۔

٭ کھلی فضا میں زیادہ سے زیادہ وقت گزاریں تاکہ آپ کا ذہن صحت مند رہے۔