دار چینی بدہضمی اور پیٹ کے درد میں مفید

0

دار چینی کا شمار ان مسالا جات میں ہوتا ہے جن کے بغیر کھانے ادھورے اور خوشبو سےمحروم ہوتے ہیں۔ دار چینی زمانہ قدیم سے کھانوں میں استعمال ہوتی آرہی ہے اور اس کی مہک دور سے ہی بھوک کی خواہش بڑھا دیتی ہے. کھانوں میں دار چینی کا استعمال دنیا بھر میں کیا جاتا ہے، خاص طور پر پاکستان ، ہندوستان اور اس سے جڑے تمام علاقوں میں دار چینی کے استعمال کو خاص اہمیت حاصل ہے۔

دارچینی میں کیلشیم، ریشے اور مینگنیز وافر مقدار میں ہوتے ہیں، جو صحت کے لیے مفید ہیں۔ دار چینی فائبر سے بھرپور ہوتی ہے اس میں آئرن بھی وافر پایا جاتا ہے۔

دار چینی کا استعمال کھانوں کے علاوہ اور بہت طریقوں سے کیا جاتا ہے جو مختلف بیماریوں (diseases and problems) میں شفا کا سبب بنتا ہے اور اس سے نظام ہاضمہ اور پیٹ کا درد بھی ختم ہوجاتا ہے۔

دار چینی : (cinnamon)

٭ دار چینی کھانوں کو خوش ذائقہ اور لذیذ بناتی ہے۔
٭ جو کھانے دار چینی سے محروم ہوتے ہیں وہ ذائقوں سے محروم ہوتے ہیں۔
٭ دار چینی کھانے کو خراب ہونے سے بچاتی ہے ، اور دیر تک تازہ رکھتی ہے۔
٭ کھانوں میں اس کی متوازن مقدار فائدہ دیتی ہے اس کا زیادہ استعمال کھانوں کو بدذائقہ بھی بناسکتا ہے۔
٭ اس کا استعمال مختلف بیماریوں میں مفید ہے۔

یہ بھی پڑھیں۔ جسم اور جلد کے لیے لیمن گراس تیل کے فائدے

دار چینی پیٹ اور بدہضمی میں مفید : (cinnamon good for indigestion)

٭ دار چینی کے استعمال سے معدے کی خرابیاں دور ہوجاتی ہیں۔
٭ کھانے کے بعد پیٹ کا پھول جانا دارچینی کے مستقل استعمال سے بہت جلد ختم ہوجاتا ہے۔
٭ دار چینی نظام ہاضمہ کو بہتر بناتی ہے جس سے انسانی صحت اچھی رہتی ہے۔
٭ دار چینی زود ہضم ہوتی ہے اس لیے اس سے طبیعت میں بھاری پن محسوس نہیں ہوتا۔
٭ بھوک نہ لگنے کی صورت میں دار چینی کا استعمال جادوئی اثر دکھاتا ہے۔
٭ ڈکاریں آنے کی صورت میں دار چینی کا سفوف لمحوں میں اس پریشانی سے جان چھڑا سکتا ہے۔
٭ قے اور متلی کو کنٹرول کرنے کے لیے دار چینی بے انتہا مفید ہے۔
٭ پیٹ میں گیس بن جانے کی صورت میں دار چینی کے استعمال سے افاقہ ہوتا ہے۔

دار چینی دیگر امراض میں مفید

٭ دانت کے درد میں دارچینی کا استعمال حیرت انگیز طور پر اثر دکھاتا ہے۔
٭ دل کے امراض میں دار چینی مختلف طریقوں سے استعمال کی جاتی ہے اور ہر طرح سے دل کے لیے فائدہ مند ہے۔
٭ جسم میں کولیسٹرول کا توازن برقرار رکھتی ہے۔
٭ سر کے درد میں دار چینی کو باریک پیس کر اس کا لیپ کچھ دیر کے لیے ماتھے پر لگایا جائے سر درد سے نجات حاصل ہوجاتی ہے۔
٭ دار چینی کی چائے خاص طور پر سردی کے موسم میں نزلہ، زکام، کھانسی اور دمے سے بچاتی ہے۔
٭ چھینکیں رکنے کا نام نہ لیتی ہوں تو انھیں دار چینی کے حوالے کردیں، چھینکیں ایسے بند ہوں گی کہ آپ سوچتے رہ جائیں گے۔
٭ دار چینی کو شہد کے ساتھ استعمال کرنے سے طاقت میں اضافہ ہوتا ہے۔
٭ شوگر کے مریضوں کے لیے دار چینی کبھی کبھی دوائوں سے بھی زیادہ پراثر ہوجاتی ہے۔

دار چینی کے نقصانات

٭ دار چینی گرم ہونے کے باعث حمل کے دوران خواتین کو استعمال کرنے سے پرہیز کرنا چاہیے۔
٭ دار چینی کے تیل سے جلد پر سرخ نشان ظاہر ہوتے ہیں جن میں جلن محسوس ہوتی ہے۔
٭ کسی بھی بیماری میں اگر اینٹی بائیوٹک لی جا رہی ہے تو اس دوران دار چینی کے استعمال سے گریز کریں۔
٭ دار چینی خون میں شکر کی سطح کو کم کرتی ہے جس سے چکر آنے کا خطرہ بڑھ سکتا ہے۔
٭ دار چینی کا زیادہ استعمال نکسیر کے پھوٹنے کا سبب بھی بن سکتا ہے۔
٭ جسم میں اگر کسی قسم کا انفیکشن ہو تو ایسے میں کوشش کی جائے کہ دار چینی کا استعمال کم سے کم کیا جائے۔