مہینے میں ایک بار سپا جانا کیوں ضروری ہے؟

0

جس طرح انسان اپنی صحت کا خیال رکھتا ہے اسی طرح جلد کی حفاظت بھی اتنی ہی ضروری ہوتی ہے، خاص طور پر وہ خواتین جو ملازمت پیشہ ہیں،ان کو تو اپنی جلد اور حسن کا بہت خیال رہتا ہے۔ دن بھر کے کام اور گرد آلود ماحول جلد کو خراب کردیتا ہے، دھول مٹی جلد کے مساموں میں جا کر بس جاتی ہے اور پھر اسے نکالنا آسان نہیں ہوتا، اس کے نتیجے میں جلد کی خوبصورتی ماندپڑنے لگتی ہے۔

خواتین کا حسن تو چمک دار جلد میں پوشیدہ ہوتا ہے، جلد جتنی روشن اور چمک دار ہوگی ، میک اپ بھی اتنا ہی جچے گا اور شخصیت میں نکھار بھی اتنا ہی پیدا ہوگا۔ کچھ خواتین خود کو سنوارنے کی اتنی عادی ہوتی ہیں کہ وہ بیوٹی پارلر جانے کی زحمت بھی نہیں کرتیں، اور اپنی صلاحیتوں سے خود کو حسین اور خوبصورت بنا لیتی ہیں۔

مہینے میں ایک بار پارلر جانا ضروری ہے؟ :
(spa day every month)

ماہر بیوٹشنز کے مطابق خواتین کو مہینے میں ایک بار بیوٹی پارلر (spa day) ضرور جانا چاہیے اور ایسی سروسز لینا چاہئیں جو اُن کی جلد کے لیے ضروری ہوں ، جس سے جلد میں تازگی پیدا ہو۔ بالوں کو برابر کرانا، ہاتھوں پیروں میں جمی میل نکالنا، جلد کے مساموں سے گرد و غبار کو نکالنا، چہرے کی جلد کو توانا بنانا یہ سب پارلر میں ممکن ہے۔

پارلرز میں مختلف قسم کی سروسز دی جاتی ہیں، جن میں مینی کیور اینڈ پیڈی کیور، فیشل، کلینزنگ، بلیچ، ویکسنگ، تھریڈنگ، ہیئر کٹنگ، ڈائی اور اس کے علاوہ بے شمار ایسی سروسز ہیں جس سے جلد اور حسن مزید تازہ ہوجاتے ہیں۔

مینی کیور پیڈی کیور

پیروں کی ایڑیاں اور ہاتھوں کے ناخن اگر میل سے جمے ہوں تو ساری شخصیت کا تاثر خاک میں ملا دیتے ہیں، اس کے لیے بیوٹی پارلر میں مینی کیور اینڈ پیڈی کیور کی سروس دی جاتی ہے جس سے ہاتھوں اور پیروں پر جما میل ختم ہوجاتا ہے، ناخن ترتیب میں تراش دیے جاتے ہیں جو مہینے میں ایک بار بہت ضروری ہوتا ہے۔

فیشل

تھکاوٹ، سستی اور کاہلی سے چہرہ ماند پڑ جاتا ہے، فیشل کا فائدہ یہ ہے اس سے جلد کے اندر دوران خون متوازن رہتا ہے اور جلد میں تروتازگی پیدا ہوتی ہے۔فیشل سے ذہنی سکون بھی حاصل ہوتا ہے جو جلد کی خوبصورتی میں اضافے کا سبب بنتا ہے۔ فیشل کی مختلف اقسام ہیں جو جلد کی اقسام کے مطابق کیا جاتا ہے۔

بلیچ

چہرے کو گورا بنانے کے لیے عموماً بلیچ کا سہارا لیتی ہیں، 30 دن یعنی ایک مہینے تک جلد پر مختلف وقتوں میں پڑنے والی دھوپ جلد کے رنگت کو متاثر کرتی ہے، جس کی صفائی کے لیے بلیچ ایک بہترین ذریعہ ہے، بلیچ جلد کے مردہ خلیوں کو ختم تو نہیں کرتی البتہ چہرے کے رئوں کو صاف کردیتی ہے، جس سے چہرہ صاف نظر آتا ہے۔

ہیرکٹنگ

کچھ خواتین کے بال بے ترتیب انداز میں بڑھتے ہیں ، جو برے لگتے ہیں، کچھ خواتین بالوں کی نوکیں نکل آتی ہیں جنھیں کچھ وقت کے بعد برابر کرانا بہت ضروری ہوتا ہے، اگر مہینے میں ایک بار بیوٹی پالر کا وزٹ کرلیا جائے تو یہ سروسز باقاعدہ ہوتی رہتی ہیں اور شخصیت نکھر کے سامنے آتی ہے۔