باہر جانے سے پہلے دانتوں کو بیکنگ سوڈ ے سے صاف کریں

0

مسکراہٹ سینے سے دل کو کھینچ لینے کی طاقت رکھتی ہے ، لوگوں کو اپنا گرویدہ بنا لیتی ہے، ایک مسکراہٹ ہزار شکووں کا بھی پیارا جواب ہوسکتی ہے۔ دانت موتیوں کے طرح چمکتے ہوئے ہوں تو مسکراہٹ کو چار چاند لگ جاتے ہیں، لیکن اگر مسکراہٹ حسین ہو اور دانتوں پر پیلی تہہ جمی ہو تو ساری مسکراہٹ کافور ہو کر رہ جاتی ہے۔

چہرے کی مسکراہٹ اور ہونٹوں کی مسکراہٹ میں وہ جادو ہوتا ہے کہ بڑے سے بڑے سنگ دل بھی موم ہوجاتے ہیں، ہونٹوں کی مسکراہٹ کا سارا انحصار دانتوں کے صاف اور شفاف ہونے پر ہوتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ دنیا بھر میں سب سے زیادہ دانتوں کی دیکھ بھال کے حوالے سے کام ہوتا ہے، اور دانتوں کا علاج بھی مہنگا تصور کیا جاتا ہے۔

زمانہ قدیم سے چہرے کے حسن کے ساتھ ساتھ دانتوں کی چمک پر بھی خاص توجہ دی جاتی رہی ہے۔ اور مختلف گھریلو ٹوٹکوں اور نسخوں سے دانتوں کو خوبصورت اور چمک دار بنانے کا کام لیا جاتا آرہا ہے۔

دانتوں کی صفائی :(teeth cleaning)

  • دانتوں کا چمک دار ہونے کے ساتھ ساتھ دانتوں کی اندونی طور پر صفائی بھی بہت ضروری ہے۔
  • کچھ لوگ اس کا خیال نہیں کرتے نتیجے میں انھیں دانتوں کے بیماریوں کا سامنا رہتا ہے۔
  • کچھ لوگ رات کو سونے سے پہلے برش کرنے کی عادت کو نظر انداز کرتے ہیں، جس سے جراثیم ان کے دانتوں میں جمع ہوجاتے ہیں اور تکلیف کا سبب بنتے ہیں۔

بیکنگ سوڈے سے دانتوں کی صفائی :
(teeth cleaning with baking soda)

  • بیکنگ سوڈا جسے سوڈیم بائی کاربونیٹ بھی کہا جاتا ہے ، دانتوں کی صفائی، چمک اور مضبوطی کے لیے بے شمار خوبیوں کا حامل ہے۔
  • یہی دجہ ہے کہ دنیا بھر میں تیار کیے جانے والے ٹوتھ پیسٹ میں بیکنگ سوڈا شامل کیا جاتا ہے۔
  • دانتوں کے میل کو صاف کرنے، اور ان جمی زرد رنگ کی تہہ کو ختم کرنے کے لیے اس سے بہتر علاج کوئی نہیں۔
  • ٹوٹھ برش پر معمولی سا بیکنگ سوڈا چھڑک کر اس میں چند قطرے لیموں کے شامل کرلیں، پھربرش کی مدد سے دانتوں کو اچھی طرح صاف کریں، مگر احتیاط رہے کہ ایک ہفتے میں ایک مرتبہ سے زیادہ یہ عمل نہ کیا جائے، اس سے دانتوں کے خراب ہونے کا خطرہ بھی بڑھ سکتا ہے۔
  • بیکنگ سوڈا کی بلیچنگ فیچر دانتوں کو چمکیلا بناتا ہے۔ بیکنگ سوڈے کو پانی میں ملا کر وہ مرکب کچھ دیر کے لیے دانتوں پر لگا چھوڑ دیں، پھر دانت صاف کرلیں۔ دانت حیرت انگیز طور پر چمک دا ر ہوجائیں گے۔
  • اگر آپ رات کے وقت گھر سے باہر جا رہے ہیں اور کھانے کا پروگرام یا کوئی دعوت ہے تو جانے سےپہلے بیکنگ سوڈے سے دانت صاف کرلیں، اس سے کھانے کے بعد جراثیم کا دانتوں میں جمنے کا امکان کم رہ جاتا ہے، یہ ایک حفاظتی تدبیر کے طور پر کیا جاسکتا ہے۔