لپ اسکرب اور لپ بام کے استعمال کے فائدے

0

ہونٹوں کی نزاکت اور رنگت حسن میں اضافے کا سبب بنتی ہے۔ کچھ خواتین کے ہونٹ اتنی دلکش ہوتے ہیں کہ ا ن کے منہ سے نکلنے والی بات بھی اچھی لگتی ہے۔ ہونٹ کتنے ہی خوبصورت کیوں نہ ہوں، لیکن جب سرد موسم کی ٹھندی اور سفاک ہوائیں ان کو چھوتی ہیں تو خشکی ان پر جم جاتی ہے۔ ہونٹ پھٹنے لگتے ہیں، اور بار بار ان پر ہاتھ لگانے سے زخم مزید گہرے ہوجاتے ہیں۔

ہونٹوں کی رنگت کو قائم رکھنے اور ہونٹوں کی نمی اور ملائمت کو برقرار رکھنے کے لیے مختلف اقسام کے لپ اسکرب اور لپ بام بازاروں میں دسیتاب ہیں جو ان کا بہتر علاج ہیں۔

لپ اسکرب استعمال کرنے کے فوائد :
(benefits of using lip scrub)

٭ ہونٹوں کی شادابی اور ان کو گلابی بنانے کے لیے ہونٹوں کی مردہ جلد کو ایکفسولیٹ کرنا بہت ضروری ہوتا ہے۔
٭ لپ اسکرب سے ہونٹوں کی رنگت مزید نکھر جاتی ہے اور ہونٹ پرکشش ہوجاتے ہیں۔
٭ ویسے تو بے شمار لپ اسکرب دسیتاب ہیں لیکن شوگر اسکرب ہونٹوں کی بھرپور حفاظت کرتے ہیں۔
٭ برائون شوگراور پیٹرولیم جیلی کی مدد سے تیار کیا گیا لپ اسکرب ہفتے میں ایک مرتبہ ضرور استعمال کریں۔
٭ اسکرب ہونٹوں کی مردہ جلد کو ہٹا دیتا ہے اور ہونٹ نرم ہوجاتے ہیں۔

لپ بام استعمال کرنے کے فوائد :
(benefits of using lip balm)

٭ لپ بام ہونٹوں کی جلد کو نمی فراہم کرنے اور انھیں پھٹنے سے بچانے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔بازاروں میں دستیاب لب بام میں کیمیکل شامل کیے جاتے ہیں جو جلد کے لیے کبھی کبھی نقصان دہ بھی ثابت ہوتے ہیں۔

٭ بازاروں میں دستیاب لب بام خریدنے سے بہتر ہے لپ بام گھر پر تیار کرلیے جائیں، یہ قدرتی اجزا کے ساتھ بہت جلد گھر پر تیار کیے جاسکتے ہیں ، جو کیمیکل سے بھی پاک ہوتے ہیں۔

لپ بام کے فائدے : (benefits of lip balm)

٭ لپ بام ہونٹوں پر پپٹری جمنے سے بچاتا ہے۔ ہونٹوں کو نمی فراہم کرتے ہیں اور انھیں مزید پھٹنے سے بچاتے ہیں۔
٭ بعض اوقات خواتین کی انگھوٹھی ان کی انگلی میں پھنس جاتی ہے جس سے درد کا احساس بھی ہوتا ہے اور الجھن بھی۔ لپ بام کو متاثرہ جگہ پر لگانے سے ان کی یہ مشکل بہت جلد آسان ہو سکتی ہے۔
٭ روکھے بالوں کو نرم و ملائم بنانے کے لیے لپ بام کو اگر ہئیر برش پر لگا کر بالوں کی جڑوں میں پہنچا دیا جائے تو بال خوبصورت اور ملائم ہوجاتے ہیں۔
٭ ناک کی جلد اندر سے اس وقت خشک ہونے لگتی ہے جب نزلہ مسلسل ہو رہا ہو، ایسے میں ناک کے اندر خارش محسوس ہوتی ہے اور بار بارکھجانے سے ناک اندر سے چھل جاتی ہے جو ایک تکلیف دہ عمل ہے۔ لپ بام کو ناک کے اندر یا ناک کے باہر اطراف میں لگایا جائے تو خشکی بہت ہوجاتی ہے۔
٭ جوتے تنگ ہوں تو کاٹنے لگتے ہیں، چلنا پھرنا دوبھر ہوجاتا ہے اور پیر کی ایڑیوں یا پیر کی انگلیوں میں زخم بھی پڑ جاتے ہیں، زخموں کی جگہ پر اگر تھوڑا سا لپ بام لگا لیا جائے تو زخم جلد بھر جاتے ہیں۔