میک اپ ٹریننگ کی اہم بیوٹی ٹپس

0

میک اپ سے خود کو سنوارنا ہی خواتین کا شوق نہیں ہوتا بلکہ کچھ خواتین کو تو دوسروں کا میک اپ کرنے کا بھی شوق ہوتا ہے اور پھریہی شوق ایک دن بیوٹیشن کا روپ اختیار کرلیتا ہے۔ جس طرح بچپن میں اکثر لڑکیاں اپنی سہلیوں اور دوستوں کے ہاتھوں پر مہندی لگاتی ہیں، نہ ان کو پیسے سے کوئی غرض ہوتی ہے نہ صلے کی تمنا ہوتی ہے، وہ تو بس اپنا شوق پورا کرتی ہیں۔

اسی طرح جن خواتین میں میک اپ کی درست پہنچان ہوتی ہے وہ زندگی کے کسی موڑ پر اپنے اس شوق کو تکمیل پہنچاتی ہیں اور پھر چھوٹی چھوٹی جگہوں پر کام کر کے ایک دن بڑے بیوٹی پارلر کی آنر بن جاتی ہیں۔ اگر آپ ماہر بیوٹیشن بننا چاہتی ہیں تو ٹریننگ کے ساتھ ساتھ کچھ ایسی ٹپس بھی ہیں جن سے فائدہ اٹھاتے ہوئے آپ میک اپ کی دنیا میں بہت ساری بیوٹیشنز کو پیچھے چھوڑ سکتی ہیں۔

میک اپ کی ٹریننگ کی اہم ٹپس

٭   سب سے پہلے تو جلد کی قسم کو اچھی طرح دیکھیں جس پر آپ میک اپ کرنے جا رہی ہیں۔

٭   میک اپ شخصیت کے مطابق کریں، جس کی جیسی شخصیت ہو اس کے مطابق اس کے ہئیر اسٹائل اور میک اپ کا انتخاب کریں۔

٭   میک اپ کے دوران اپنے ہاتھوں کو ہلکے انداز میں گھمائیے، بہت زیادہ زور سے ہاتھ چلانے سے جلد کو نقصان پہنچ سکتا ہے۔

٭   جب بھی کسی کا میک اپ کریں اور خاص طور پر اگر دلہن کو سجانے کا موقع مل جائے تو اس کی جلد کی رنگت کو خاص طور پر نظر میں رکھیے اور پھر اس کے نقوش بھی غور سے دیکھیں کہ اس پر کون سا میک اپ سوٹ کرے گا۔

٭   برائیڈل میک اپ سے انھیں بھرپور نیند لینے کا مشورہ دیں، اس سے چہرے کی جلد میں تنائو پیدا ہوتا ہے، اور میک ا پ مزید نکھر کر سامنے آتا ہے۔

٭   ساری توجہ چہرے پر ہی مرکوز نہ رکھیں بلکہ ہاتھ اور پیروں اور خاص طور پر ایڑیوں کی صفائی کا خیال رکھیں۔

٭   اگر موسم سرد ہو تو ڈارک میک اپ کا انتخاب کریں کیوں کہ سردیوں کے موسم میں جس طرح سرخ اور گلابی پھو ل کھلتے ہوئے اچھے لگتے ہیں، اسی طرح دلہن کا حسین میک اپ بھی موسم سرما کی وجہ سے مزید نکھنرے لگتا ہے۔

٭   ہئیر اسٹائل بناتےہوئے یا بالوں کو ڈائی کرتے وقت کیمیکل لگانے کے معاملے میں محتاط رہیں، ذرا سی بے احتیاطی بالوں کے لیے خطرناک ثابت ہوسکتی ہے۔

٭   گردن کی صفائی پر توجہ دیں، بہت سی بیوٹیشن سارا وقت چہرے کو حسین بنانے میں گزار دیتی ہیں اور جب دلہن یا ماڈل تیار ہوجاتی ہے تو اس کی گردن میں کمی محسوس ہوتی ہے جو اس وقت بہت زیادہ گراں گزرتی ہے۔

٭   میک اپ کے لیے ہمیشہ اچھی اور معیاری پروڈکٹس استعمال کریں، جس سے نہ تو جلد پر کسی قسم کا انفیکشن ہوتا ہے اور نہ ہی جلد کو کسی قسم کے نقصا ن کا سامنا ہوتا ہے۔

٭   جس جگہ میک اپ کیا جا رہا ہے وہاں لائٹس کا ضرور خیال رکھا جائے تاکہ میک اپ کا درست اندازہ ہوسکے۔

٭   میک اپ کے دوران گھریلو نسخے استعمال کرنے کی بجائے پروڈکٹس کے استعمال پر توجہ دیں۔

٭    بلیچ کرتے ہوتے اس کا بات کا خاص خیال رکھیں کہ اس میں شامل کیا جانے والا محلول زیادہ مقدار میں شامل نہ ہوجائے جس سے جلد میں سوزش پیدا ہو یا پھر جلد لال ہوجائے۔

٭   میک اپ کے دوران زیادہ سے زیادہ ٹشو پیپرز استعمال کریں، تولیہ یا پھر کوئی خراب کپڑا استعمال کرنے سے گریز کریں، اس سے جلد پر جراثیم پھیلنے کےعلاہ جلد کے سرخ ہونے کا بھی امکان ہوتا ہے جو حسن کو گہنا کے رکھ دیتا ہے۔

٭   چہرے پر ماسک لگانے کے بعد کوشش کریں کلائنٹ سے زیادہ بات نہ کریں، اس سے چہرے پر جھریوں کا امکان ہوتا ہے اور جلد ڈھیلی بھی پڑ سکتی ہے۔

٭   میک اپ کرتے ہوئے کمرے کا درجہ حرارت مناسب رکھیں،اگر گرمی محسوس ہو تو پنکھے یا اے سی کا فوراً سہارا لیں تاکہ میک ا پ بہنے سے بچ جائے۔